qaumikhabrein
Image default
ٹرینڈنگقومی و عالمی خبریں

رمضان المبارک۔ مختلف ملکوں میں روزے کا دورانیہ ساڑھے 11 سے 17 گھنٹے کے قریب ہوگا۔

رمضان المبارک کا آغاز کہیں ہونے والا ہے اور کہیں ہو چکا ہے۔ یورپی ملکوں،مشرق وسطیٰ اور خلیجی ملکوں میں جمعرات کو رمضان کا آغاز ہوا جبکہ ایشیائی ملکوں میں مسلمان جمعہ کو پہلا روزہ رکھیں گے۔ دنیا بھر کے مسلمان اپنی مقامی وقت کے مطابق روزے رکھیں گے۔

اس سال دنیا کے بیشتر حصوں میں رمضان کا آغاز 23 مارچ سے ہونے کا امکان ہے، تاہم اس کا فیصلہ رویت ہلال سے ہی ہوگا۔
ہر ملک میں سحر و افطار کے اوقات مختلف ہوتے ہیں جس کا انحصار سورج طلوع اور غروب ہونے پر ہوتا ہے۔
اس سال دنیا کے مختلف ممالک میں روزے کا دورانیہ ساڑھے 11 سے 17 گھنٹے کے قریب ہوگا۔آئیے دیکھتے ہیں کن ملکوں میں روزے کا دورانیہ سب سے کم اور کن ملکوں میں سب سے زیادہ ہوگا۔

جنوبی نصف کرے میں واقع لاطینی امریکی ملک چلی میں روزے کا دورانیہ دنیا میں سب سے کم ہوگا۔اس ملک میں روزے کا اوسط دورانیہ 11 گھنٹے 30 منٹ طویل ہوگا۔
اس کے بعد جنوبی افریقا، ارجنٹینا، نیوزی لینڈ، پیرا گوئے اور یورو گوئے وہ ممالک ہیں جہاں روزوں کا دورانیہ 11 سے 12 گھنٹے کا ہوگا۔
برازیل، زمبابوے اور انڈونیشیا میں یہ دورانیہ 12 سے 13 گھنٹے جبکہ سنگا پور، ملائیشیا، سوڈان اور یمن میں یہ دورانیہ 13 سے 14 گھنٹے کے درمیان ہوگا۔

روزے کے طویل ترین دورانیے والے ممالک
یورپی ملک آئس لینڈ کے بیشتر حصوں میں روزوں کا دورانیہ سب سے طویل ہوگا جو 16 گھنٹے 50 منٹ تک ہوگا۔
اس کے بعد گرین لینڈ، فرانس، پولینڈ اور انگلینڈ ایسے ممالک ہیں جہاں روزوں کا دورانیہ 16 سے 17 گھنٹے کے درمیان ہوگا۔
یونان، پرتگال، چین، امریکا، ترکیہ، کینیڈا اور شمالی کوریا میں یہ دورانیہ 15 سے 16 گھنٹوں کے درمیان ہوگا۔
پاکستان، جاپان، ایران، عراق، شام، فلسطین، ہندستان، متحدہ عرب امارات، قطر اور سعودی عرب میں روزے کا دورانیہ 14 سے 15 گھنٹے کے درمیان ہوگا۔

ان ممالک میں کیا ہوگاجہاں سورج کی روشنی پورے دن برقرار رہتی ہے؟
ایسے ممالک جہاں سورج طلوع اور غروب ہونے کے درمیان 3 گھنٹے سے بھی کم وقت ہوگا، وہاں کے مسلمان رہائشی دیگر ممالک کے شیڈول پر عمل کریں گے۔وہاں کے رہائشی مکہ مکرمہ کے سحر اور افطار کے شیڈول پر عمل کر سکیں گے۔

خلا میں مسلمان روزہ کیسے رکھتے یا افطار کرتے ہیں؟
متحدہ عرب امارات کے ایک خلاباز سلطان Al Neyadi اس وقت انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن (آئی ایس ایس) پر موجود ہیں اور وہ رمضان کا مہینہ وہاں گزارےگا۔

آئی ایس ایس زمین کے گرد 17 ہزار 500 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چکر لگاتا ہے اور وہاں رہنے والے دن بھر میں 16 بار سورج کو طلوع اور غروب ہوتے دیکھتے ہیں۔
خلا میں موجود یو اے ای کے خلا باز جی ایم ٹی ٹائم زون یا مکہ کے ٹائم کے مطابق سحر اور افطار کریں گے۔

Related posts

ایرانی عازمین حج کا جدہ میں شاندار استقبال

qaumikhabrein

پروفیسر وصی حیدر کی کتاب ستاروں کی سرگوشیاں کا اجرا۔

qaumikhabrein

آنکھ کی پُتلی اور ذہانت کے درمیان تعلق کا انکشاف۔

qaumikhabrein

Leave a Comment