qaumikhabrein
Image default
ٹرینڈنگسیاستقومی و عالمی خبریں

لبنانی وزیر اطلاعات بیان واپس لینے کو تیار نہیں۔ عرب امارات نے بھی لبنان سے سفیر واپس بلا لیا

لبنانی وزیر کے یمن کے حوثیوں کی حمایت میں دئے گئے بیان پر عرب لیڈروں کے تن بدن میں آگ لگی ہوئی ہے۔یمن کے معاملے پر لبنان کے وزیر اطلاعات جارج کردہی نے ایک ٹیلی ویزن انٹر ویو میں یمن کی جنگ کو سعودی عرب اور متدہ عرب امارات کی جارحیت قرار دیا تھا۔انہوں نے یمن کی جنگ کو فضول قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ اسے اس لئے بند ہوجانا چاہئے کہ وہ عربوں کے درمیان جنگ کے مخالف ہیں۔ سب سے پہلے اس بیان پر چراغ پا ہوتے ہوئے سعودی عرب نے لبنان سے تمام درآمدات پر پابندی لگا دی تھی اور اپنے سفیر کو لبنان سے واپس بلا لیا تھا۔اب متحدہ عرب امارات نے بھی لبنان سے اپنا سفیر واپس بلا لیا ہے۔

متحدہ عرب امارات لبنان سے اپنا سفیر واپس بلانے والا چوتھا ملک ہے، اس سے قبل سعودی عرب، کویت اور بحرین بھی لبنان سے احتجاجاً اپنے سفیر واپس بلا چکے ہیں۔عرب لیگ کے سربراہ نے دولت مند عرب ملکوں اور لبنان کے درمیان تعلقات کی کشیدگی پر تشویش ظاہر کی ہے۔

لبنانی وزیر اطلاعاتأجارج

دوسری جانب لبنانی صدر مشیل عون نے سعودی عرب سے سفارتی تنازع کے حل کیلئے نمائندے مقرر کر نے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب سے بہترین تعلقات چاہتے ہیں۔اس درمیان لبنان کے وزیر اطلاعات جارج نے عرب ملکوں کی ناراضگی کی پرواہ نا کرتے ہوئے اپنا بیان واپس لینے سے انکار کیا ہے۔ادھر عرب امارات نے اپنے شہریوں س لبنان چھوڑنے کو کہا ہے۔

Related posts

سی بی ایس ای امتحان منسوخ کیا جائے۔ کیجری وال۔

qaumikhabrein

ماسکو نے “یہودی ایجنسی” کو اپنی سرگرمیاں روکنے کا حکم دے دیا

qaumikhabrein

جوش ملیح آباد مرثیہ پڑھتے بھی خوب تھے۔

qaumikhabrein

Leave a Comment