qaumikhabrein
Image default
ٹرینڈنگقومی و عالمی خبریں

سبزی فروش فیصل کو پولیس اہلکاروں نے پیٹ پیٹ کر مار ڈالا۔

اٹھارہ سالہ فیصل کی پٹائی سے موت

اناؤ کے اٹھارہ سالہ فیصل کو سبزی فروخت کرکے گھروالوں کا پیٹ بھرنے کی سزا یہ ملی کہ پولیس نے اسے پیٹ پیٹ کر مار ڈالا۔ معاملہ سنگین ہوتا دیکھ کر ضلع کے تین پولیس اہلکاروں پر قتل کا الزام لگا کر کیس درج کیا گیا ہے۔ انڈین ایکسپریس اخبار کی رپورٹ کے مطابق واقعہ جمعہ کا ہے جب پولیس اہلکار فیصل کو سبزی منڈی سے اٹھا کر لے گئے۔ اسے سبزی منڈی سے پولیس اسٹیشن تک پیٹتے ہوئے لایا گیا۔ پویس حکام کا کہنا ہیکہ فیصل کو کرفیو کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں حراست میں لیا گیا تھا۔ پولیس حکام نے ابتدا میں یہ کہانی گڑھی کہ فیصل کی موت دل کا دورہ پڑنے سے ہوئی ہے۔ اسے دیگر کئی فراد کے ساتھ بانگر مؤ پولیس اسٹیشن لایا گیا تھا۔ لیکن دوپہر بعد پولیس کی جانب سے بتایا گیا کہ کانسٹیبلز وجے چودھری اور سیماوت اور ہوم گارڈ ستیہ پرکاش کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ تینوں اہلکاروں کو معطل کیا گیا ہے۔

فیصل کی ہلاکت کے خلاف لوگوں کا احتجاج

فیصل کے چچا معراج کا کہنا ہیکہ فیصل کو اس وقت پولیس والوں نے پیٹنا شروع کیا جب وہ سبزی فروخت کررہا تھا۔ اسے موٹر سائکل پر بٹھا کر پولیس اسٹیشن لیجایا گیا جہاں اسکی بری طرح پٹائی کی گئی۔ جسکی وجہ سے اسکی موت ہوگئی۔ مقتول فیصل کے بھتیجے سلمان نے بتایا کہ پولیس والے فیصل کو پیٹتے ہوئے پولیس اسٹیشن لے گئے جہاں اسے بہت پیٹا گیا۔ حالت بگڑنے پر اسے اسپتال لیجایا گیا لیکن اسکی موت ہوجانے کے بعد پولیس اہلکار اسپتال سے فرار ہو گئے۔ فیصل کی موت کے بعد علاقہ میں کشیدگی پھیل گئی اور لوگ پولیس اسٹیشن کے پاس جمع ہو گئے۔ اناؤ ایس پی آنند کلکرنی کا دعویٰ ہیکہ فیصل کو پیٹا نہیں گیا۔ بیمار پڑنے پر اسے اسپتال لیجایا گیا جہاں اسکی موت ہو گئی۔ پولیس اور گھر والوں کے بیان میں زبردست اختلاف ہے۔پوسٹ مارٹم کی رپورٹ سےہی فیصل کی موت کی وجہ کا پتہ لگ سکتا ہے۔

Related posts

نیوز ایٹین اردو چینل۔21 برس کی عمر میں موت یا سازش کے تحت قتل

qaumikhabrein

امروہا میں حسینی ٹائگرز کے دفتر کا افتتاح

qaumikhabrein

مسجد اقصی کو تقسیم کرنے کی صیہونی سازش کا انکشاف

qaumikhabrein

Leave a Comment