qaumikhabrein
Image default
ٹرینڈنگسیاستقومی و عالمی خبریں

جنسی ہراسانی کے ملزم آئی پی ایس کو آسام کے ایک ضلع کا ایس پی بنایا گیا۔

جنسی ہراسانی کا ملزم آئی پی ایس گورو اپادھیائے

ایک ایسے آئی پی ایس افسر کو آسام کے ایک ضلع کا ایس پی بنایا گیا ہے جسکے خلاف ایک تیرہ سالہ لڑکی کی جنسی حملے کا الزام ہے۔انگریزی اخبار انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق گورو اپا دھیائے نامی اس آئی پی ایس افسر کے خلاف اکتیس مارچ 2020 کو مختلف دفعات کے تحت چارج شیٹ داخل کی جا چکی ہے۔ جن دفعات کے تحت گورو اپادھیائے کے خلاف الزامات عائد کئے گئے ہیں ان میں جنسی ہراسانی، جنسی حملے اور پوسکو ایکٹ شامل ہے۔ کیس تین جنوری 2020 کا ہے جسکی آسام کے کریمنل انویسٹی گیشن ڈپارٹمنٹ نے جانچ کی تھی اور آسام کے کامروپ کے میٹروپولیٹن ضلع کے پوسکو ایکٹ کے اسپیشل جج کی عدالت میں چارج شیٹ داخل کی گئی تھی۔ چارج شیٹ میں دعویٰ کیا گیا ہیکہ گورو اپادھیائے کے خلاف جنسی زیادتی کے کافی ثبوت موجود ہیں۔ گورو اپادھیائے 2012 میں گوہاٹی میں تیعنات تھا۔ گورو اپادھیائے 2012 کے یو پی بیچ کا آئی پی ایس افسر ہے۔ جس وقت تیرہ ساکہ لڑکی کی جنسی ہراسانی کا گورو اپاھیائے پر الزام لگا تھا اس وقت وہ کاربی آنگلانگ میں ایس پی تھا۔

تصویر بشکریہ انڈین ایکسپریس۔ ہیمنت سرما۔ وزیر اعلیٰ آسام

بی جے پی کی نئی حکومت بننے کے بعد پولیس افسروں کے بڑے پیمانے پر تبادلوں کے دوران گورو اپادھیائے کا چیرانگ میں تبادلہ کیا گیا۔ آسام کے ڈی جی پی بھاسکر جیوتی مہنتا کا اس سلسلے میں کہنا ہیکہ متعلقہ افسر کا معاملہ عدالت کے زیر غور ہے اگر عدالت کا فیصلہ اسکے خلاف آتا ہے تو اسے گرفتار کیا جائےگا۔ لیکن عدالت کا فیصلہ آنے تک ہمیں اس افسر کی خدمات کا استعمال کرنا ہے۔

Related posts

مکتب سدرۃ المنتہیٰ کا اسٹوری ٹائم پروگرام

qaumikhabrein

نائجیریا میں فوج کا پھر امام حسین کے عزاداروں پر حملہ۔متعدد شہید اور زخمی

qaumikhabrein

انصاراللہ کے ڈرونزکا ابو ظہبی پر حملہ۔ متحدہ عرب اماراتی حمکرانوں کی نیند حرام۔

qaumikhabrein

Leave a Comment